January 23, 2018.Entertainments

بالی ووڈ جانے والوں کو ہندو دھکے مارتے ہیں، ملک میں پیار ملتا ہے: صدف کنول

لاہور(ویب ڈیسک) اداکارہ وماڈل صدف کنول نے کہا کہ بالی ووڈ جانے والوں کو جس طرح سے انتہا پسند ہندواپنے رنگ بدلتے ہیں اوردھکے مار کراپنے ملک سے باہرنکالتے ہیں، اس کے بعد انہیں اپنے ہی ملک میں پناہ اورپیارملتا ہے۔” صدف کنول نے کہا کہ دیکھا جائے تواس وقت پاکستان میں اچھی فلمیں بن رہی ہیں، نوجوان فلم میکر اچھا کام کررہے ہیں اوراب تو عوام کا رجحان بھی بننے لگا ہے۔ لیکن اس کے باوجود بالی ووڈ میں کام کرنے کا ”جنون “ میرے نزدیک توسوائے بے وقوفی کے اورکچھ نہیں ہے۔اداکارہ نے کہا کہ اب تک ہمارے ملک کے سپرسٹارز نے بالی ووڈمیں کام کیا ہے لیکن ان کووہاں کسی نے سپرسٹارنہیں مانا ، بلکہ جہاں بھی انہیں موقع ملا انھوں نے بڑی سوچی سمجھی سازش کے تحت انہیں خوار کیا اوربری طرح سے واپس جانے پرمجبور کیا۔ ایسے میں بھارت اوربالی ووڈ کا حقیقی چہرہ سب کے سامنے آچکا ہے۔ ان حالات میں بالی وڈ کی یاترا کرنے والے ہر ایک معروف اورنوجوان فنکارکو یہ سوچ کریہاں سے آگے بڑھنا ہوگا کہ وہ جس کامیابی کی تلاش میں انتہائی قدم اٹھا رہے ہیں۔ ان کوایک دن یہاں ہی واپس آنا ہے۔

صدف کنول نے کہا کہ بھارت میں حالات بگڑنے کے بعد جس طرح سے انتہا پسند ہندواپنے رنگ بدلتے ہیں اوردھکے مار کراپنے ملک سے باہرنکالتے ہیں، اس کے بعد انہیں اپنے ہی ملک میں پناہ اورپیارملتا ہے۔ اس لیے ایسی عزت اورشہرت کا کیا فائدہ جوپل بھرکی ہو جب کہ اس حوالے سے اپنا ملک سب سے اچھا ہے۔ یہاں ہم کام کریں یا نہ کریں، لیکن لوگ پیارکرتے اورعزت دیتے ہیں۔اداکارہ نے کہا کہ جب اپنے ملک میں بہترین کام کرتے ہوئے عزت، شہرت اور اہم مقام مل سکتا ہے توپھرکسی دوسرے ملک میں جاکرکام کرنا یا وہاں کام کرنے کے لیے سفارشیں تلاش کرنا کہاں کی سمجھ داری ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہماری پہچان پاکستان سے ہے اورمجھے پاکستانی ہونے پرفخرہے لیکن جولوگ بالی ووڈ کوکامیابی کی ضمانت مانتے ہیں وہ اپنے ساتھ ہی نہیں بلکہ اپنے ملک کے ساتھ بھی زیادتی کررہے ہیں۔ انہیں ہوش کے ناخن لینے چاہئیں۔

Like Our Facebook Page

Latest News