October 13, 2018,.ڈیلی بائیٹس

وہ آدمی زبردستی میرے گھر میں داخل ہوا، میری 7 سالہ بیٹی کے سامنے میرے کپڑے اُتارے اور۔۔۔‘

آکلینڈ(نیوز ڈیسک) جنسی جرائم کی لعنت ہر جگہ عام پائی جاتی ہے مگر نیوزی لینڈ جیسا پُرامن ملک، جہاں جرائم کی شرح بہت کم ہے، وہاں ایک وحشی درندے نے ایک نوجوان خاتون کو اس کی کمسن بیٹی کے سامنے ایسی درندگی کا نشانہ بنایا ہے کہ جان کر انسان کی روح کانپ اٹھے۔

تیئس سالہ خاتون کا کہنا ہے کہ وہ اپنی سات سالہ بیٹی کے ساتھ اپنے گھر میں سوئی ہوئی تھی کہ جب یہ بدبخت ایک کھڑکی کے راستے گھر میں داخل ہو گیا۔ پہلے تو اس نے ایک کمرے سے رقم چرائی اور پھر بیڈروم میں جا پہنچا۔ وہاں سوئی خاتون اور اس کی کمسن بچی کو اس وحشی نے گردن سے دبوچ لیا اور انہیں مار ڈالنے کی دھمکیاں دیتے ہوئے خاتون کو بیڈ سے نیچے اترنے کو کہا۔ اس کے بعد بچی کے سامنے اسے بے لباس کر کے زیادتی کا نشانہ بنایا۔
متاثرہ خاتون نے بتایا کہ اس وحشی کی درندگی اسی پر ختم نہیں ہوئی بلکہ وہ اسے تشدد کا نشانہ بھی بناتا رہا۔ کچھ دیر بعد اُس نے خاتون کو دوبارہ زیادتی کا نشانہ بنایا اور پھر مزید کچھ وقت کے بعد تیسری مرتبہ اُس کی عصمت دری کی۔ یہ تمام وحشت کمسن بچی کی آنکھوں کے سامنے برپا ہوئی۔ سفاک درندے کے فرار ہو جانے کے بعد خاتون بھاگ کر اپنے ہمسایوں کے پاس پہنچی اور فوری طور پر پولیس کو اطلاع کی گئی۔ پولیس نے چھ دن کی تگ و دو کے بعد بالآخر اس شیطان صفت کو پکڑ لیا ہے۔ اس وحشی کا نام لورینز شانین اور عمر صرف 17 سال ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اس نے آئس نامی نشہ بکثرت کر رکھا تھا جس کے بعد وہ خاتون کے گھر میں گھسا اور بھیانک جرائم کا ارتکاب کیا۔
یاد رہے کہ آئس وہ نشہ ہے جسے استعمال کرنے والے نیم پاگل اور جنونی ہو جاتے ہیں۔ وہ کوئی بھی ایسی حرکت کر سکتے ہیں جس کا نارمل آدمی کبھی تصور بھی نہیں کر سکتا۔ ہمارے ملک میں بھی کچھ عرصے سے اس نشے کا نام سننے کو مل رہا ہے۔ خصوصاً کالجوں اور یونیورسٹیوں کے طالب علموں میں اس نشے کی مقبولیت ایک ایسی بات ہے جو صرف تشویشناک نہیں بلکہ خوفناک ہے۔

Like Our Facebook Page

Latest News