January 19, 2018.ڈیلی بائیٹس

پھانسی کے مجرم کے گھر میں صف ماتم لیکن لاش پہنچنے سے پہلے اچانک ایسا کام ہوگیا کہ ہر طرف خوشیوں کا سماں بندھ گیا

فیصل آباد(ویب ڈیسک)صلح ہونے پر تہرے قتل کے مجرم منظور عرف جورا کی پھانسی عین وقت پر ٹل گئی ،ا پنی بھاوج اور اس کی دو بیٹیوں کو قتل کیا تھا،سوگ میں ڈوبے گھر میں خوشیاں لوٹ آئیں ۔میڈیا کے مطابق چودہ برس قبل جڑانوالہ کے گاﺅں 22گ ب میں گھریلو لڑائی جھگڑوں اور تنازعات پر منظور عرف جورا نے اپنی بھاوج امینہ اور اس کی دو بیٹیوں شگفتہ اور تسلیم بی بی کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا ، واقعہ کے کچھ ماہ بعد مجرم کو گرفتار کر کے مقدمہ کی کارروائی شروع ہوئی اور 22نومبر 2005ءکو سیشن جج فیصل آباد عبدالوحید خان نے منظور عرف جورا کو جرم ثابت ہونے پر موت کی سزا سنا دی ، مجرم نے صدر سے رحم کی اپیل کی جوسات روز قبل مسترد کر دی گئی ۔

دوسری طرف ورثا نے متاثرہ خاندان سے صلح کی کوششیں بھی کیں لیکن کوئی مفاہمت نہ ہونے پر جیل حکام نے 17جنوری کو منظور عرف جورا کو سنٹرل جیل فیصل آباد میں پھانسی دینے کی تیاریاں مکمل کر لی تھیں اور اس سلسلہ میں اس کے گھر والوں نے آخری ملاقات بھی کر لی تھی ، آج صبح پھانسی کے حکم پر عمل درآمد سے پہلے لواحقین نے متاثرہ خاندان سے مصالحت کی دوبارہ کوشش کی جو کامیاب ہو گئی اور عین وقت پر متاثرہ خاندان نے مجرم کو معاف کر دیا جس سے منظور عرف جورا کی پھانسی ٹل گئی اور سوگ میں ڈوبا منظر خوشیوں میں تبدیل ہوگیا۔

Like Our Facebook Page

Latest News