May 6, 2018,.ڈیلی بائیٹس

اگر بچوں کو بچپن میں ان کی ماں سے دور کر دیا جائے تو ان کے ذہن پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں اور کونسی بیماری لاحق ہونے کا خدشہ پڑ جاتاہے ؟ تحقیق میں ایسا انکشاف کہ کوئی بھی ماں اب اپنے بچے کو ایک لمحے کیلئے بھی اپنے سے دور نہ ہونے دے گی

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) یہ حقیقت تو ہم سبھی جانتے ہیں کہ ماں کے لیے اپنی اولاد سے بڑھ کر دنیا میں کچھ نہیں ہوتا۔ اب سائنسدانوں نے بچوں کے لیے ماں کی ایسی اہمیت کا انکشاف کر دیا ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔ امریکہ کی انڈیانا یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے اپنی تحقیق میں بتایا ہے کہ جن بچوں کو بچپن میں بہت کم وقت کے لیے بھی ماں سے دور کر دیا جائے ان کے دماغ پر اس کے انتہائی منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ ان کے دماغ کی ہیئت ہی تبدیل ہو جاتی ہے اور اس کے افعال نارمل نہیں رہتے۔ ماں کی دوری سے بچے کی ذہنی نشوونما میں جو بگاڑ آتا ہے وہ ہو بہو شیزو فرینیا (Schizophrenia)جیسی خطرناک ذہنی بیماریوں سے لاحق ہونے والے بگاڑ کے جیسا ہوتا ہے۔

سائنسدانوں نے اس تحقیق میں چوہوں پر تجربات کیے۔ تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ، پروفیسر کرسٹوفر لیپش کا کہنا تھا کہ ”ہم نے کچھ ننھے چوہوں کو محض 24گھنٹے کے لیے ان کی ماﺅں سے دور کیا۔ اتنے کم عرصے میں ہی ان کے دماغ پر ایسے شدید منفی اثرات مرتب ہوئے کہ ہم حیران رہ گئے۔چوہے کے ان بچوں کی عمر9دن تھی جب انہیں ماں سے الگ کیا گیا۔چوہوں اور انسانوں کے دماغ کا سٹرکچر اور ربط بالکل ایک جیسا ہے، اس لیے انسانوں میں بھی بچوں کو ماں سے دور کرنے کے یہی نقصانات ہوں گے، جو تمام عمر ان کے ساتھ رہیں گے، بلکہ بڑی عمر میں اس ذہنی بگاڑ کی شدت اور زیادہ بڑھ جائے گی۔“

Like Our Facebook Page

Latest News