January 23, 2018.ڈیلی بائیٹس

سائنسدانوں نے 18 سالہ لڑکی کے 9 ہزار سال پرانے ڈھانچے سے اس کا چہرہ بنا ڈالا، یہ کیسی دکھتی تھی؟ دیکھ کر آپ کی بھی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ جائیں گی

ایتھنز(مانیٹرنگ ڈیسک) سائنسدانوں کو کچھ عرصہ قبل یونان کی ایک غار سے 18سالہ لڑکی کا 9ہزار سال قدیم ڈھانچہ ملا تھا جس سے انہوں نے اب اس کا چہرہ بنا ڈالا ہے اور یہ لڑکی کیسی دکھائی دیتی ہے؟ دیکھ کر آپ کی آنکھیں بھی حیرت سے کھلی کی کھلی رہ جائیں گی۔نیشنل جیوگرافک کی رپورٹ کے مطابق ماہرین کا کہنا ہے کہ ”اس لڑکی کا نام ایوگی (Avgi)تھا اور کسی نے آج سے لگ بھگ 9ہزار سال قبل آخری بار اس کا چہرہ دیکھا ہو گا جب یہ یونان میں زندہ تھی اور اب لوگ ایک بار پھر اس کا چہرہ دیکھ رہے ہیں۔“

ایوگی کے ڈھانچے سے سائنسدانوں نے اس کی جو تصویر بنائی ہے اس میں وہ ایک خوبصورت اور تنومند خاتون دکھائی دے رہی ہے۔ اس کے چہرے کی ہڈیاں نسبتاً ابھری ہوئی، گھنی بھنویں اور ڈمپل والی ٹھوڑی ہے۔سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”ایوگی 7ہزار قبل مسیح کے زمانے میں یونان میں زندہ تھی۔ یہ وہ دور تھا جب انسان نے شکار کے ساتھ ساتھ اپنی خوراک خود اگانی شروع کی تھی۔“ ایوگی کے معنی طلوع آفتاب یا زمانے کی شروعات کے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ سائنسدانوں نے اسے یہ نام دیا ہے کیونکہ اس کا تعلق اس دور سے ہے جب انسان ایک نئے دور کی بنیاد رکھ رہا تھا۔

Like Our Facebook Page

Latest News